بھورا بھورا سُفنے : عائشہ اسلم ملک

بھورا بھورا سُفنے : عائشہ اسلم ملک

بھورا بھورا سُفنے

عائشہ اسلم ملک

بھورا بھورا سُفنے

کٹھیاں کر کے

دل نی کٹوری وچ پائے

ورھیاں نے ہنجو

خورے کیہڑے مُل تے ویچن آئے

ہٹیاں تے جندرے

بُلہاں تے تروپے

کیہڑے ہتھیں لائے

ویلے نے اخبار اچ سُرخی ناہیں

سارے ورقے

لہو وچ بجھے

ساہواں دا اکتارا بولے

ایک ہی بانی توُنبا وجدا پریت والا

!میں ناہیں سبھ تُوں

بھورا بھورا سُفنے : عائشہ اسلم ملک

Be the first to comment

Share your Thoughts: