غزل ۔۔۔ زبیر قیصر

Zubyr Qaisar is one of the young poets of Pakistan  and a sound voice in poetry. Born in 1975, he started writing poetry in the year 2000.  He has published one anthology “ abhi kuch keh nahi saktey” so far .

 

غزل

(زبیر قیصر)

اگر نہ ہوگا کبھی اپنا رابطہ , طے ہے

تو لگ رہا ہے محبت کا مرحلہ طے ہے

ہر ایک سانس پہ تاوان کس کو بھرنا جب

بشر کے ساتھ خدا کا معاھدہ طے ہے

کہاں پہ خاک اڑانی ہے ، بیٹھنا ہے کہاں

مسافرانِ محبت کا راستہ طے ہے

تمام عمر ترا ہجر مجھ کو سہنا ہے

کہ آسمان و زمیں کا یہ فاصلہ طے ہے

اندھیری رات سے کیسا گلہ زبیر کہ اب

دیے کے ساتھ ہوا کا معاملہ طے ہے

 

Advertisment

Be the first to comment

Share your Thoughts:

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.