شاعری

غزل ۔۔۔ شہناز پروین سحر

January 12, 2019

 غزل ( شہناز پروین سحر ) ایک بلور سی مورت تھی سراپے میں سحر چھن سے ٹوٹی ہے مگر ایک چھناکے میں سحر پاوْں کی انگلیاں مُڑ جاتی ہیں بیٹھے بیٹھے چیونٹیاں رینگتی ہیں تن کے بُرادے میں سحر ٹوٹتے رہتے ہیں کچھ خواب ستاروں جیسے کرچیاں پھیلتی رہتی ہیں خرابے میں سحر کاغذوں میں […]

Read More

کافی کے کپ کے ساتھ پڑی زندگی ۔۔ مسعود قمر

January 12, 2019

کافی کے کپ کے ساتھ پڑی زندگی ( مسعود قمر ) میں زندہ ہوں اپنی موت میں مجھے کوئی نہیں مار سکتا میری زندگی میں تم  کبھی بهی، کہیں بھی جاسکتی ہو زندہ رہنے کے لیے گلاب جامن کے ساتھ  سموسے کھانے! زندگی اگر  گلاب جامن کے ساتھ سموسے کھانے کا نام ہے تو جانِ […]

Read More

چُھٹی کا دن ۔۔۔ عذرا عباس

January 12, 2019

نظم ( عذرا عباس )  ·  آج چھُٹی کا دن تھا ایک بازو خالی ہے ایک بوجھ سے جھول رہا ہے ایک پاؤں سو گیا ایک سفر پر آمادہ ہے آدھا جسم اونگھ رہا ہے آدھارت جگا کرتا ہے اونے پونے میں نے اپنا اثاثہ بیچ دیا  آدھی زندگی گزار دی  آدھی سوٹ کیس میں […]

Read More

غزل ۔۔۔ صابر ظفر

January 5, 2019

غزل ( صابر ظفر ) اندھیرے غار سے آیا ہوں رات اوڑھے ہوئے مگر وہ شخص کہ نور حیات اوڑھے ہوئے ہر ایک انت سے آگے نکلنا چاہتا ہوں میں سایہ شجر ممکنات اوڑھے ہوئے تمام عمر شب و روز کے سفر میں رہا میں ایک چادر رنج و نشاط اوڑھے ہوئے مجھے جلائے کوئی […]

Read More

سال 2018 کی آخری غزل ۔۔ فرح خاں

January 3, 2019

سال 2018 کی آخری غزل ( فرح خاں ) پرایا ہجر اگتا ہے زمینِ خشک بنجر میں اداسی تلملاتی ہے سہولت سے جو منظر میں سنو کردار لازم ہو گا پیڑوں اور ہواؤں کا پرندوں کی اذیت کا کسی شاخِ گلِ تر میں کسی داسی کے دل میں وصل کی خواہش اگر جاگے کرے اشنان […]

Read More

آئیہ اواخر ۔۔۔ ذوالفقار فرخ

January 3, 2019

آئیہ اواخر ( ذوالفقار فرخ ) ہم سنبھلتے تو تب بھی کیا ہوتا برف کی اُن سِلوں پہ تھے ہم لوگ جو پھسل جاتی ہیں ٹھہرتی نہیں برف کے ریگزار ِ سرد میں یہ چھیل دیتی ہیں منظروں کے بدن پاؤں پیوست ہو چکے ہیں مگر مت سمجھنا کہ ہم گریں گے نہیں ایک وقت […]

Read More

غزل ۔۔۔ مصطفے زیدی

December 29, 2018

غزل ( مصطفے زیدی ) اب جی حدود سود و زیاں سے گزر گیا اچھا وہی رہا جو جوانی میں مر گیا پلکوں پہ آ کے رک سی گئی تھی ہر ایک موج کل رو لیے تو آنکھ سے دریا اتر گیا تجھ سے تو دل کے پاس ملاقات ہو گئی میں خود کو ڈھونڈنے […]

Read More

ایک نظم ۔۔۔ ابرار احمد

December 29, 2018

( ابرار احمد ) ایک نظم ہر روز کوئی قلم ٹوٹ جاتا ہے کوئی آنکھ پتھرا جاتی ہے کوئی روزن بجھ جاتا ہے کوئی چہرہ ساکت ہو جاتا ہے کوئی سسکی جاگ اٹھتی ہے ار کوئی ہاتھ جھڑ جاتا ہے ہر روز کوئی چھت بیٹھ جاتی ہے کوئی درخت گر جاتا ہے کوئی آہٹ رخصت […]

Read More

میں جانتی ہوں ۔۔۔ عائشہ اسلم

December 29, 2018

میں جانتی ہوں ( عائشہ اسلم ) میں جانتی ہوں اس عمر میں جھولا جھولنے کا انجام کیا ہوتا ہے مجھے سر کے بل یا اوندھے منہ گرنا ہوگا میں پرندوں کا سفر دیکھنا چاہتی ہوں مگر وہ کسی بات پر آمادہ نہیں ہوتے میں خواہشوں کو جلاوطنی کی دھوپ سے بچا بھی لوں تو […]

Read More

بے مصرف ۔۔۔ ثانیہ شیخ

December 29, 2018

بے مصرف ( ثانیہ شیخ ) تمہارے گھر میں بھیاک ایسا کمرہ توہو گاجہاں ہم بے مصرف ضروری اشیاءپھینک دیتے ہیںجنہیں ہم خود سے الگ بھینہیں کرنا چاہتےاور برتنا بھی نہیں ممکنسو ایسا کرومری محبت وہاں رکھ دویہ بے مصرف بھی ہےاور دیکھو قیمتی بھی ہےکسی آنے والے زمانے میںجب یہ ہنگامِ عمر اپنیمدت پوری […]

Read More
Show Buttons
Hide Buttons
%d bloggers like this: