سگریٹ کی پنی پر لکھی تحریر ۔ زاھد مسعود

سیگرٹ کی پَنّی پر لکھی تحریر
(زاھد مسعود)

آؤ 
مجھے گلے لگاؤ
میں
تم سے بچھڑ چکا ہوں
موسموں
اور
چینلوں کے تجزیوں نے مجھے رسوا کیا
میری بے توقیری
میری جنم پتری سے برآمد کی جاتی ہے
میرے حصّے کی
ہوا
اور روٹی
میری کم از کم اجرت میں درج نہیں
میں
ہر پانچ سال بعد
پرچی کی قیمت پہ زندہ کیا جاتا ہوں
مجھے
میرے چراغ کی لَو میں لُوٹا گیا
اور
میرے لہو کے اندر خلیوں کی جیب بنا کر
کاٹی گئی
تم مجھے پہچانتے ہو تو
آؤ
مجھے گلے لگاؤ
میں
 تم سے بچھڑ چکا ہوں

 

Advertisment

Be the first to comment

Share your Thoughts:

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.