غزل ۔۔۔ شفیق احمد خان

Shafiq Ahmed Khan is a well known Gazal poet from Lahore.

غزل

( شفیق احمد خان )

صدائے خواب جرس سے کبھی تو باہر آ

ملال ِ موج ِ نفس سے کبھی تو باہر آ

جہان سیل ِ زیاں کے سوا کچھ اور نہیں

خرد کے پیش سے پس سے کبھی تو باہر آ

نکل کے دیکھ کبھی رنج ِ رایئگانی سے

تو یاد ِ یار ِ قفس سے کبھی تو باہر آ

خیال ِ سود کے دامن کو چھوڑ دے اک دن

تو اپنے دل کی ہوس سے کبھی تو باہر آ

شرار بن کے کبھی پھونک دے زمانے کو

مزاج ِ ظلمت ِ خس سے کبھی تو باہر آ

عذاب ِ ترک ِ مراسم سے دل خراب نہ کر

شفیق پچھلے برس سے کبھی تو باہر آ

Advertisment

Be the first to comment

Share your Thoughts: