خواب ہم دن میں پکڑ لیں کوئی جگنو جیسا ۔۔۔ شمامہ افق

Shamama Ufaq is a young lawyer and a promising poet of Pakistan. She has special inclination towards human rights. Her poetry is getting popular day by day.

غزل

( شمامہ افق )

جسم کو روح کی سرحد پہ بلا کر دیکھیں
کیوں نہ آئینے کے اندر کبھی جا کر دیکھیں

جن کی آنکھوں میں کوئئ خواب نہیں ہے وہ لوگ
سوکھے پیڑوں سے پرندے ہی اڑا کر دیکھیں

خواب ہم دن میں پکڑ لیں کوئئ جگنو جیسا
بارہا رات میں پھر اس کو جلا کر دیکھیں

اس میں گرداب, بہاؤ نہ کٹاؤ ہے کہیں
کیوں نہ تالاب میں اک اشک گرا کر دیکھیں

اس سے پہلے کہ خموشی ہی سی دم گھٹنے لگے
ٹوٹتی سانس کی زنجیر ہلا کر دیکھیں

Advertisment

Be the first to comment

Share your Thoughts: