چار موسم ۔۔۔ڈاکٹر لبنیٰ آصف

چار موسم 

(ڈاکٹر لبنیٰ آصف)

چاہتوں کے موسم میں
دل کی سرزمینوں ہر
بارشیں برستی ہیں
_________________________

وصل کے زمانوں میں
ہجر پاؤں رکھتا ہے
آنکھ بھیگ جاتی ہے
_________________________

خواہشوں کی قبروں پر
آنسوؤں کی قندیلیں
ساری رات جلتی ہیں
_________________________

دور تک اداسی ہے
ہو کا ایک عالم ہے
رات دن برابر ہیں 
_________________________

 

Advertisment

Be the first to comment

Share your Thoughts: