Day: July 6, 2019

One Hundred Years of Solitude … Garcia Marquez

July 6, 2019

GABRIEL GARCIA MARQUEZ was born in Aracataca, Colombia in 1928, but he lived most of his life in Mexico and Europe. He attended the University of Bogota and later worked as staff reporter and film critic for the Colombian newspaper El Espectador. In addition to ONE HUNDRED YEARS OF SOLITUDE, he has also written two […]

Read More

دیوار ۔۔۔ جین پال سارتر

July 6, 2019

دیوار ( ژاں پال سارتر ) انہوں نے ہمیں چونے سے پتے ایک سفید ہال میں دھکیل دیا۔ میری آنکھیں چندھیانے لگیں۔ وہاں کی تیز روشنی میں میری آنکھوں میں تکلیف شروع ہوگئی۔تبھی میں نے ٹیبل کے نیچے چارسویلین کو ایک کاغذ پرجھکا ہوا دیکھا۔ انہوں نے پیچھے دوسرے قیدیوں کو ایک قطار میں کھڑا […]

Read More

کاش اک بار ۔۔۔ گلزار

July 6, 2019

کاش اِک بار گلزار . رات چپ چاپ دَبے پاؤں چلی جاتی ہے صرف خاموش ہے، روتی نہیں، ہنستی بھی نہیں کانچ کا نیلا سا گنبد بھی اُڑا جاتا ہے خالی خالی کوئی بجرا سا بہا جاتا ہے چاند کی کرنوں میں وہ روز سا ریشم بھی نہیں چاند کی چکنی ڈلی ہے کہ گھلی […]

Read More

عطیہ ۔۔۔ نثار ناسک

July 6, 2019

عطیہ ( نثار ناسک) میں جب جائوں گا  اس دنیا میں  اپنی دونوں آنکھیں چھوڑ جائوں گا کہ ڈھلتی شام میں  سڑکوں کے دو رویہ گرے سوکھے ہوئے پتوں پہ جب جوڑے چلیں  ہاتھوں میں ڈالے ہاتھ  اور سسکاریوں کے درمیاں  ہنستے ہوئے جذبوں کے گھنگرو بج اٹھیں  تو یہ آنکھیں انہیں دیکھیں  مجھے روئیں  […]

Read More

مرنے کے بعد ۔۔۔ خشونت سنگھ

July 6, 2019

مرنے کے بعد ( خشونت سنگھ ) سن انیس سو پنتالیس کی ایک شام۔ مجھے بخار ہے۔ میں بستر میں پڑا ہوں، لیکن کوئی گھبراہٹ والی بات نہیں ہے، بالکل ہی گھبرانے والی بات نہیں، کیونکہ مجھے میرے حال پر ہی چھوڑ دیا گیا ہے۔ میرے پاس میری تیمارداری کے واسطے کوئی بیٹھا بھی نہیں […]

Read More

عجائب خانہ ۔۔۔ ثروت زہرا

July 6, 2019

عجائب خانہ ( ثروت زہرا ) مرا وجود دیکھتے ہی دیکھتے ایک عجائب خانے میں ڈھل رہا ہے کہ میرے لاشعور نے آثار قدیمہ کی نادر عنائتوں کو چھپا کے مجھ سے مجھ ہی میں جمع کر دیا ہے یہاں کہیں کسی ریک میں میرے حنوط شدہ حرف اور لمحے پڑے ہوئے ہیں جنہیں نجانے […]

Read More

قرار داد ِ مقاصد ۔۔۔ ٹیپو سلمان

July 6, 2019

قرار داد مقاصد (ٹیپو سلمان مغدوم ) جدوں لوکی چِیک چِیک کے کہندے نیں کہ میرا بی 712 عیسوی اِچ پیا سِی تے مینوں دَندَل جئے پے جاندے نیں۔ میں تے 1949ء اِچ   بحرِ عرَب دے  کَنڈّے جمّی  ساں، اے مینّوں اِک ہزار  دوُنہہ سوَ وَرھے پہلاں  کِتھے  دھروُکی پھِردے نیں؟ پر لوکی لال پِیلے ہوندے نیں، رالاں وگاندے نیں۔ ایہو […]

Read More

غزل ۔۔۔ فرح خان

July 6, 2019

غزل ( فرح خان ) کھ راہواں تے بیٹھی روندی رہندی اے کیہ دساں میں کِنے صدمے سہندی اے سینے. وچوں کملا ڈِگ ڈِگ پیندا اے خورے اوہدی یاد کیہ دل نوں کہندی اے جس دے ویکھن خاطر اکھاں مردیاں سن میرے ہتھاں تے اوس خواب دی مہندی اے ایویں تے نئیں اکھاں میٹ کے […]

Read More
Show Buttons
Hide Buttons
%d bloggers like this: