فاصلے اور فیصلے ۔۔۔ شہناز پروین سحر

فاصلے اور فیصلے

شہناز پروین سحر

بھیتر کی بے کار ضدوں کو

بھیتر ہی دفنا آئی ہوں

دل کے ضدی بالک کو بھی

سختی سے سمجھا آئی ہوں

لوٹ کے واپس آئی ہوں تو بھول گئی ہوں

کہاں گیا گھر آنگن میرا

کہاں ہے میرا رین بسیرا

میرے دونوں بے بس پاوں

راہ نہ پوچھیں

خاموشی سے

چلتے جایئں

تھکتے جایئں

سمجھ گئے ہیں

وہاں ۔۔۔۔

جہاں سورج ڈوبے گا

وہیں تلک ہے

جوگی والا بے کل پھیرا

وہیں ہے جیون رین بسیرا

Similar Posts:

Facebook Comments Box

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.

Calendar

January 2022
M T W T F S S
 12
3456789
10111213141516
17181920212223
24252627282930
31