غزل ۔۔۔ اسرار زیدی

غزل

( اسرار زیدی )

برف کا ہر منجمد تودہ پگھل ہی جائےگا

آج پت جھڑ ہے تو کل موسم بدل ہی جائے گا

سامنے کی دشمنی تو حوصلے کی بات ہے

جو پسِ پردہ رہا وہ ہاتھ جل ہی جائے گا

اب تو شاخوں پر ہرے کیا زرد پتے بھی نہیں

وائے خوش فہمی کہ یہ طوفاں بھی ٹل ہی جائے گا

گھر سے نکلے تو نگہبانوں کے تیور اور تھے

ہم انہی سوچوں میں گم ہیں کام چل ہی جائے گا

اک نہ اک دن ختم ہو جایئں گے سائے جبر کے

آدمی اپنے حصاروں سے نکل ہی جائے گا

Read more from Asrar Zaidi

Read more Urdu Poetry

Facebook Comments Box

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.

Calendar

June 2024
M T W T F S S
 12
3456789
10111213141516
17181920212223
24252627282930