شکتی ۔۔۔ فاطمہ مہرو

شکتی

فاطمہ مہرو

جیتی جاگتی زندگی میں

شکتی

فاطمہ مہرو

جیتی جاگتی زندگی میں

میں موت کے

کئی حسین خواب دیکھتی رہی ہوں

فانی زندگی میں

ابدی موت کی طرف

نیند میں

ہر کوئی نہیں چل سکتا

زندگی کے انسو مینیا سے

ہر جگراتا

 لطف اندوز نہیں ہو سکتا

ہر سوئے ہوئے کو

لا فانیت کی ابدی بہاریں

نصیب نہیں ہوتیں

میں زندگی کے پہلے دن سے

مرنے میں جینے

اور جینے میں مرنے کی

پریکٹس کر رہی ہوں

مجھے

انسومینیا کے پل پر سے

زندگی اور موت کو

دھکا دینے کی

شکتی حاصل کرنی ہے۔ا

میں موت کے

کئی حسین خواب دیکھتی رہی ہوں

فانی زندگی میں

ابدی موت کی طرف

نیند میں

ہر کوئی نہیں چل سکتا

زندگی کے انسو مینیا سے

ہر جگراتا

 لطف اندوز نہیں ہو سکتا

ہر سوئے ہوئے کو

لا فانیت کی ابدی بہاریں

نصیب نہیں ہوتیں

میں زندگی کے پہلے دن سے

مرنے میں جینے

اور جینے میں مرنے کی

پریکٹس کر رہی ہوں

مجھے

انسومینیا کے پل پر سے

زندگی اور موت کو

دھکا دینے کی

شکتی حاصل کرنی ہے۔

Similar Posts:

Facebook Comments Box

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.

Calendar

January 2022
M T W T F S S
 12
3456789
10111213141516
17181920212223
24252627282930
31