غزل ۔۔۔ تنویر عباس نقوی

غزل

تنویر عباس نقوی

فسوں مندر کے دیکھوں گا

صحیفے گھر کے دیکھوں گا

محبت آگ ہوتی ہے

رگوں میں بھر کے دیکھوں گا

بنا کے آیئنہ خود کو

سمے اندر کے دیکھوں گا

تری فطرت کو رکھ کے میں

مقابل شر کے دیکھوں گا

تجھے لگتی ہیں لگ جایئں

میں نظریں بھر کے دیکھوں گا

بہت دن جی لیا نقوی

کسی دن مر کے دیکھوں گا

Share your Thoughts:

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.

Show Buttons
Hide Buttons
%d bloggers like this: