غزل ۔۔۔ فرح خان

غزل

فرح خان

کوئی رنگ ہے نہ جمال ہے ، مری زندگی بھی کمال ہے
عجب الجھے الجھے ہیں روز وشب ،نہ عروج ہے نہ زوال ہے

کبھی دن کو کھینچ کے شام کی ،کبھی شام سے ہوئی رات پھر
یہ اذیتوں کی ہے داستاں، مری وحشتوں کا جمال ہے

تُو تو زندگی کا اسیر تھا ،تجھے زندگی میں خوشی ملی
ترے بعد ہم نہیں مر سکے ،ترے بعد جینا محال ہے

کوئی لمحہ ایسا ہو مہرباں ،جو سمیٹ لے سبھی دوریاں
مری رات دن یہی سوچ ہے، مجھے روز وشب یہ خیال ہے

کبھی جل اٹھے، کبھی بجھ گئے، مری آرزو کے چراغ سب
مرے حوصلوں کی یہ داستاں، مرے جذبِ دل کا کمال ہے

مجھے اُس سے کوئی گلہ نہیں کہ فرح وہ مجھ کو ملا نہیں
مرے دوستوں کی ہیں سازشیں، مرے دشمنوں کی یہ چال ہے

Farah Khan
READ MORE FROM THIS AUTHOR

Farah Khan is an Urdu poet and fiction writer from Pakistan. She has written many famous Urdu Ghazals. Her most famous works are ‘Tere Siwa to Nazar Mein Koi Jacha Hi Nahin, ‘Charagh Sabr Ke Jis Ne Jalae Roya Hai,’ and ‘Ye Zindagi Jo Mili Hum Ko Kam Mohabbat Mein.'

Read more from Farah Khan

Share your Thoughts:

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.

Calendar

January 2021
M T W T F S S
 123
45678910
11121314151617
18192021222324
25262728293031
Show Buttons
Hide Buttons
%d bloggers like this: