شام ہوتے ہی تجھے گھر پہ بلایئں کیسے ۔۔۔ ثمینہ سید

غزل.

 ثمینہ سید

دل کی دھرتی پہ کوئی پھول اگائیں کیسے

شام ہوتے ہی تجھے گھر پہ بلائیں کیسے

چاند نکلے تو مرے گھر میں اجالا آئے

روبرو ہو کے ترے آنکھ ملائیں کیسے

بارہا اس میں گرے پھول بھی آکر لیکن

چھید اتنے ہیں کہ دامن میں سمائیں کیسے

یوں چلیں شہر میں نفرت کے بگولے ہرسو

دیپ الفت کے منڈیروں پہ جلائیں کیسے

ہم تو مدت سے ثمینہ ہیں یہاں خاک بسر

ہم ترے شہر کی توقیر بڑھائیں کیسے

Similar Posts:

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.

Calendar

September 2021
M T W T F S S
 12345
6789101112
13141516171819
20212223242526
27282930  
Show Buttons
Hide Buttons