رب میری فریاد سنے گا ۔۔۔ عائشہ اسلم ملک

نظم

عائشہ اسلم ملک

عدالت کا حکم تھا

اور مجھے تو جانا تھا

اس کے سنگ تھے بول پڑھے

وہ جو میرا سایئں تھا

اس کو بھی معلوم نہ تھا

اور میں نے یہ کب سوچا تھا

اپنے میرے رشتے سب

فولادی ہاتھوں سے

پتھربرسانے آیئں گے

پہلا پتھر کس نے مارا

سب اچانک ہوا تھا لوگو

جن کے لہو کے رشتے تھے

لہو لہان وہ کرتے رہے

اس کو غیرت کہتے ہیں وہ

مذہب اور قانون کے حق کو

میں نے استعمال کیا

کیا یہ جرم تھا ؟

اسکی معافی کہیں نہ تھی

عدالت نے سب کچھ دیکھا تھا

ہزاروں آنکھیں شاہد تھیں

لیکن سب خاموش رہے

کل ان کی بیٹی میری تصویر بنائے گی

تب بھی وہ گنگ رہیں گے کیا

میری چیخیں عدالتوں سے باہر

آواز بنی تھیں

لیکن نفسا نفسی میں

کچھ سنائی کب دیتا ہے

سنگ باری نے مہلت نہ دی

ورنہ پوچھنا چاہتی تھی کچھ

رب میری فریاد سنے گا ؟

Ayesha Aslam Malik
READ MORE FROM THIS AUTHOR

Ayesha Aslam is an Urdu fictional writer, broadcaster, and dramatist. She has written many dramas for radio and TV. She also worked as a copywriter, PTV Announcer, and Compare Voiceover. 

She worked as the editor of ‘Jugnu,’ a monthly children magazine in Lahore, and ‘Hina,’ a women magazine. She also served as the scriptwriter for PTV. She received her master’s degree from Punjab University. Her most famous drama is ‘Aj Di Aurat.’

Read more from Ayesha Aslam

Share your Thoughts:

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.

Calendar

December 2020
M T W T F S S
 123456
78910111213
14151617181920
21222324252627
28293031  
Show Buttons
Hide Buttons
%d bloggers like this: