نظم ۔۔۔ نور الھدیٰ شاہ

نظم

( نور الھدیٰ شاہ )


‏ہم چندلوگوں کوخدا نےبلایاتھا
حال احوال پوچھا
کہو کیسی گزررہی ہے؟
ہم نےاپنےاپنےہونٹ
زبانیں
اور
دماغ
اسکےحضوررکھ دیے
سسک کرعرض کیا
خدایا
ہمارےملک میں
اب یہ کسی کام کےنہیں رہے
انکےاستعمال پرپابندی ہے
ہم یہ نعمت تجھےواپس لوٹاتےہیں
بس
آنسوبہانےکےلیے
دوآنکھیں
اورایک دل ساتھ لیےجاتےہیں


Share your Thoughts:

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.

Show Buttons
Hide Buttons
%d bloggers like this: