چنگاری ۔۔۔ صفیہ حیات

چنگاری

صفیہ حیات

تم میرا نام

راکھ پہ

لکھ کر تو دیکھو

بجھی چنگاری بھڑک اٹھے گی

تمہارے جھوٹ

جلا کر راکھ کرے گی

گر ایسا نہ ہوا

تو کسی گلیشئر پہ لکھنا

پھر دیکھنا

شعلے

جنگل میں آگ کی طرح پھیل کر

بے وفائی کی ہر رسم بھسم کریں گے

تم نہیں جانتے

تمہاری بےرخی نے زمانے بھر میں

بیوفائی عام کی

اور وفا

صدیوں پرانی تاریخ کی روایت بنی

Facebook Comments Box

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.

Calendar

March 2024
M T W T F S S
 123
45678910
11121314151617
18192021222324
25262728293031