غزل ۔۔۔ یوسف حسن

Yusuf Hassan, a progressive Pakistani thinker and a serious Marxist has a unique style in poetry and is admired for his literary contributions. He passed away last week.

غزل

( یوسف حسن )

اسی حریف کی غارت گری کا ڈر بھی تھا

یہ دل کا درد مگر زار رہگذر بھی تھا

اسی پہ شہر کی ساری ہوایئں برہم تھیں

کہ اک دیا میرے گھر کی منڈیر پر بھی تھا

یہ جسم و جان تری ہی عطا سہی لیکن

ترے جہان میں جینا میرا ہنر بھی تھا

اسی کھنڈر میں مرے خواب کی کلی بھی تھی

کلی میں پیڑ بھی تھا پیڑ پر ثمر بھی تھا

مجھے کہیں کا نہ رکھا سفید پوشی نے

میں گرد گرد رواں تھا تو معتبر بھی تھا

میں سرخرو تھا خدائی کے روبرو یوسف

کہ اس کی چاہ کا الزام میرے سر بھی تھا

Similar Posts:

Facebook Comments Box

2 thoughts on “غزل ۔۔۔ یوسف حسن

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.

Calendar

October 2021
M T W T F S S
 123
45678910
11121314151617
18192021222324
25262728293031
Show Buttons
Hide Buttons