sumera-qureshi-poetry-agar-tum-jangalon

نظم ۔۔۔ سمیرا قریشی

نظم

(سمیرا قریشی)

 

اگر

تم جنگلوں کی طرف جائو

تو ڈھونڈنا وہ درخت

جن پہ کندہ ہوں بہت سے نام

جس نام کا چاہو

مجھے درخت بنا کر 

مجھ سے ٹیک لگا کر سو جانا 

قمیض کا کالر بدل کر پہننے سے 

قمیض کی زندگی بڑھ جاتی ہے 

نیا کالر ہمیں لے جائے گا 

پرانے خواب میں

جب ہم نے ایک دوسرے کے ساتھ 

ٹیک لگا کر دھوپ سینکی تھی

جب ہم نے 

ایک دوسرے کے کالر پہ بیٹھے

جگنو کی روشنی میں 

ایک دوسرے کے اندر دیکھا تھا

 

Facebook Comments Box

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.

Calendar

February 2024
M T W T F S S
 1234
567891011
12131415161718
19202122232425
26272829