Urdu اردو

A collection of Urdu poetry, stories, essay and literature in general. Penslips magazine strives to bring the literary works of classic and contemporary Urdu writers and poets to a single platform.

Urdu is the national language of Pakistan and therefore, spoken, read, and understood by majority of Pakistanis living at home or abroad. Moreover, this language is also spoken and understood by millions of Indians, serving as a language of peace and a primary language for cross cultural exchange within the subcontinent.

Despite sharing an Indo-Aryan base with Hindi, evolution of Urdu is aligned with various invasions of the subcontinent, starting from the Muslim conquest of Sindh in 711. The language is influenced by some of the richest languages such as Persian (Farsi), Arabic, Punjabi and Haryanvi.

Scroll down to discover a unique collection of poetry, short stories, essay, as well as criticism, reviews, and much more on Penslips.

In this section, you will also find foreign literature translated in Urdu; an effort to add to the richness of this beautiful language.

 

نیلی نوٹ بک ۔۔۔ انور سجاد

February 9, 2019

نیلی نوٹ بُک ( عمانویل کزا کیویچ )  مترجم: ڈاکٹر انور سجاد عمانویل کزا کیویچ 1913 میں یوکرین میں پیدا ہوا ۔1932 میں اسکی نظموں کا پہلا مجموعہ ” ستارہ ” کے نام سے شائع ہوا جس نے اسے پوری دنیا سے متعارف کروایا۔ بعد ازاں اس کی لکھی کتابیں ، اودر کی بہار، دل […]

Read More

تسلیم فاضلی ۔۔۔ شہناز پروین سحر

February 9, 2019

تسلیم فاضلی ۔۔۔ ایک تیز رفتار شاعر ( تالیف و تحقیق :: شہناز پروین سحر ) پاکستان کی فلم انڈسٹری میں مسرور انور اور تسلیم فاضلی کا شمار کامیاب ترین خالص فلمی شاعروں میں ہوتا ہے اور ان شاعروں میں ایک بات قدرِ مشترک تھی کہ یہ انتہائی آسان زبان میں گیت لکھتے تھے اور […]

Read More

گھسٹتا انسان ۔۔۔ ممتاز مہر

February 9, 2019

گھسٹتا انسان ( ممتاز مہر ) میں چل رہا ہوں۔ مسلسل چل رہا ہوں۔ بہت تھک گیا ہوں۔ لیکن رکتا نہیں۔ بیٹھتا نہیں۔ جب چل نہیں سکتا تو گھسٹتا ہوں۔ پیچھے دیکھتا ہوں۔ میرے ننھے منے بچے بھی میرے پیچھے چلے آ رہے ہیں۔ ان کے پیچھے ہمارا گھر بھی گھسٹتا، ڈولتا، ڈگمگاتا چلا آ […]

Read More

پتی ورتا ۔۔۔ شاہین کاظمی

February 9, 2019

پتی ورتا ( شاہین کاظمی )   میری ماں عجیب سی تھی آدھی سے زیادہ زندگی رسوئی میں گزار کر پتی ورتا ہونے کا ثبوت دیتے دیتے ایک اِس نے خاموشی سی آنکھیں موند لیں روز کھانا پروس کر وہ اپنے پتی کی چہرے پر اُگنے والے تاثرات میں محبت کا کوئی بھولا بھٹکا پرکاش […]

Read More

غزل ۔۔۔ ذوالفقار تابش

February 9, 2019

غزل ( ذوالفقار تابش ) اس کے باغ بدن کو دیکھتے ہیں اک چمن در چمن کو دیکھتے ہیں پھول پتے ہیں شاخساروں پر ہم گلاب اور سمن کو دیکھتے ہیں نقرئی لوح پر نقوش بہار خالق کل کے فن کو دیکھتے ہیں اک کلی جو شگفتنی ہے ہنوز ایک غنچہ دہن کو دیکھتے ہیں […]

Read More

غزل ۔۔۔ ایوب خاور

February 9, 2019

غزل ( ایوب خاور ) کن ہواوں میں رہے کون نگر ٹھہرے ہیں قافلے کیا سر آغاز سفر ٹھہرے  ہیں جانے کب ہجرہ ء جاں میں تیری خوشبو اترے ابھی سینے میں ترے ہجر کے ڈر ٹھہرے ہیں آس ٹھہرے سر دل پھر “ترے پیکر کے خطوط” مگر اس بار بہ انداز دگر ٹھہرے ہیں […]

Read More

پیلے موسم ۔۔۔ صفیہ حیات

February 9, 2019

پیلے موسم ( صفیہ حیات ) وہ رستہ آج بھی  وہیں جاتا ھے۔ اس راہ کے سینے پہ اگا موڑ منتظر کھڑا ھے درخت کندھے کے ساتھ کندھا جوڑے ندی کنارے نیلے پانی کے آئنہ میں دن بھر اپنا عکس دیکھتے  سرگوشیاں کرتے  ندی کے اس پار  سرسوں کے کھیت میں  بھوری آنکھوں والی لڑکی […]

Read More

ہمارا جرم ناقابل تلافی ہے ۔۔۔ سبین علی

February 9, 2019

ہمارا جرم ناقابلِ تلافی ہے  ( سبین علی ) ہمارا جرم ناقابلِ تلافی ہے  ہم نے خواب دیکھے  جاگتی آنکھوں اور بند آنکھوں سے بھی  سوچتی رہیں ہمارا قلم شبِ تاریک سے  روشنائی لیتا رہا  اور دن کے سفید چہرے پر نظم لکھتا رہا  ہماری کہانیوں میں  گلِ مصلوب کا لہو  جنگل کا سبزہ گواہ […]

Read More

نیلی نوٹ بک ۔۔۔ انور سجاد

February 2, 2019

نیلی نوٹ بُک ( عمانویل کزا کیویچ )  مترجم: ڈاکٹر انور سجاد عمانویل کزا کیویچ 1913 میں یوکرین میں پیدا ہوا ۔1932 میں اسکی نظموں کا پہلا مجموعہ ” ستارہ ” کے نام سے شائع ہوا جس نے اسے پوری دنیا سے متعارف کروایا۔ بعد ازاں اس کی لکھی کتابیں ، اودر کی بہار، دل […]

Read More

لینن کا نظریہ جمالیات ۔۔۔ کروپسکایا

February 2, 2019

لینن کا نظریہِ جمالیات ( کروپسکایا ) “موسمِ خزاں کے آخر میں جب برف باری ابھی تک شروع نہیں ہوئی تھی۔ لیکن دریا پہلے سے منجمد تھے۔ ہم وہاں ندیوں پر بہت دور تک نکل جاتے تھے۔ ہر کنکر اور ہر چھوٹی سے چھوٹی مچھلی برف کی تہہ میں ایسے جیسے کوئی ساحرانہ بادشاہت ہو، […]

Read More
Show Buttons
Hide Buttons
%d bloggers like this: